Thursday, September 1, 2016

KHAWAJA UMER FAROOQ

وٹس ایپ چیٹنگ کے فوائد اور نقصانات

وٹس ایپ کو آپ دنیا کی مشہور ترین ایپلی کیشنز میں سے ایک کہہ سکتے ہیں۔

وٹس ایپ کے شیدائی آپ کو قریباً دنیا بھر میں نظر آئیں گے، یہاں تک کہ پاکستان میں بھی وٹس ایپ کو انتہائی مقبولیت حاصل ہے۔ وٹس ایپ ہر قسم کے موبائل سافٹ وئیر کیلئے الگ الگ بنایا گیا ہے۔ اس وجہ سے آپ بآسانی کسی بھی موبائل میں اسے انسٹال کر سکتے ہیں۔ یہ ہر انٹرنیٹ یا سمارٹ فون استعمال کرنے والے کی دسترس میں ہے۔ لوگوں کی وٹس ایپ تک بآسانی رسائی ہی اس کی مقبولیت کی وجہ بنی،تاہم اس کے فوائد سے مستفید ہو کر نقصانات کو نظر انداز کر دینا کسی طور بھی سمجھداری نہیں، جہاں وٹس ایپ نے دنیا کو ایک گلوبل ویلج بنا دیا ہے، وہی اس کے کئی نقصانات بھی ہیں۔ جیسا کہ ہر وقت وٹس ایپ پر چیٹنگ میں مصروف رہنا اور اپنے قریبی رشتے داروں، دوست احباب کو نظر انداز کر دینا معاشرے میں ایک بُرا تاثر چھوڑتا ہے۔

پروفائل پکچر، دوستوں کا سٹیٹس اور فولکس وٹس ایپ کے شائقین کو ہر وقت مصروف رکھتے ہے، مثال کے طور پر یہ سوچنا کہ آپ کے دوست کا سٹیٹس کوئی میسج ہے یا پھر طنز، اپنے دوست سے چیٹنگ پر پوچھنا شروع کر دینا کہ اس کے عجیب یا پھر خوشی والے سٹیٹس کے پیچھے راز کیا ہے۔ یہاں تک کہ کئی لوگ جب کوئی چیٹنگ یا پھر ٹیکسٹ نہیں کر رہے ہوتے تو وٹس ایپ کی ہوم سکرین کو اِدھر اُدھر سکرول کرنا شروع کر دیں گے کہ کہیں کوئی اپ ڈیٹ ان دیکھی نہ رہ جائے۔ جب پہلی دفعہ وٹس ایپ لانچ ہوئی ،تو صارفین کو سالانہ فیس (0.99 ڈالر) ادا کرنا پڑتی تھی جبکہ 19 فروری 2014ء میں فیس بک کی ملکیت میں آنے کے بعد اسے مکمل طور پر فری کر دیا گیا اور کئی مزید فیچرز بھی اس میں شامل کیے گئے۔ فیس بک کے ڈیزائنرز نے وٹس ایپ میں ہر وہ چیز شامل کی، جس کی عام مواصلاتی زندگی میں لوگوں کو ضرورت ہے۔ یہ بھی ایک خاص وجہ ہے کہ دنیا بھر میں وٹس ایپ صارفین کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا۔


وٹس ایپ کوقریباً پوری دنیا میں بالکل فری کر دیا گیا ہے ۔ یہاں تک کہ پاکستان میں بھی کئی ٹیلی کمیونیکیشن کمپنیز نے وٹس ایپ کی فری سروس جاری کی ہے۔ اس لیے کاروباری طبقے سمیت نوجوانوں کی بڑی تعداد پر وٹس ایپ کا بھوت سوار ہے۔ وٹس ایپ پر ایک اور دلچسپ چیز جو زیادہ تر دیکھنے میں آئی ہے، وہ یہ ہے کہ پُش نوٹی فکیشن دیکھتے ہی لوگ وٹس ایپ استعمال کرنا شروع کر دیتے ہیں۔ پُش نوٹی فکیشن نہ ہو ،تو آپ اپنی مرضی کا تھوڑا سا وقت نکال کر وٹس ایپ استعمال کر سکتے ہیں، لیکن پُش نوٹی فکیشن ہر وقت آپ کو اپ ڈیٹ رکھتا ہے اور آپ بار بار ان اپ ڈیٹس کو دیکھتے چلے جاتے ہیں۔ اس سے بچاؤ کیلئے آپ اپنے سمارٹ فون کی سیٹنگ میں جائیں پھر ایپلی کیشن منیجر میں جا کر وٹس ایپ سرچ کریں، مل جانے پر وٹس ایپ کے آئیکن پر کلک کریں۔ اس کے بعد آپ کے سامنے تین چار آپشنز آ جائیں گی، ان میں سے ایک ’’شو نوٹی فکیشن‘‘ بھی ہو گی۔ بس آپ نے یہ کرنا ہے کہ شو نوٹی فکیشن پر کلک کر کے اسے ان شو کر دینا ہے۔ اس طرح پُش نوٹی فکیشن بار بار آپ کے سمارٹ فون کی سکرین پر آویزاں نہیں ہو گا۔ 

آئیے وٹس ایپ کے فوائد اور نقصانات پر ایک سرسری سی نظر دوڑاتے ہیں۔

 وٹس ایپ کے فوائد 
1۔ آپ وٹس ایپ کے ذریعے دنیا کے کسی بھی کونے میں بآسانی مفت میسج بھیج سکتے ہیں۔ 
2۔ وٹس ایپ کی طرف سے مہیا کیے گئے تمام ٹولز نہایت آسان ہیں۔ 
3۔ یہ ایپ خودکار طور پر آپ کے تمام کانٹیکٹس سم سے انپورٹ (درآمد) کر لیتی ہے اور ساتھ ہی آپ کو یہ بھی بتاتی ہے کہ آپ کے کانٹیکٹس میں کون کون وٹس ایپ استعمال کر رہا ہے۔ 
4۔ آپ اپنے دوستوں کے ساتھ اپنی تصویریں، لوکیشن، ویڈیوز، اور سٹیٹس شیئر کر سکتے ہیں۔ 
5۔ آپ کو اپنے دوستوں کے ساتھ فون پر بات کرنے کے لیے کسی قسم کوئی ادائیگی نہیں کرنی پڑتی۔ 
6۔ آپ وٹس ایپ کو کمپیوٹر پر بھی بالکل ایسے ہی استعمال کر سکتے ہیں ،جیسے کہ موبائل فون پر۔ 

وٹس ایپ کے نقصانات جہاں ہر چیز کا کوئی پلس پوائنٹ ہوتا ہے، وہی اس کا نگیٹو پوائنٹ بھی ہوتا ہے، تو یہاں اس شاندار ایپلی کیشن کے کچھ نقصانات سے بھی آگاہ ہو جائیں: 
1۔ آپ کی پروفائل پکچر ہر اس شخص کے لیے ویزیبل (نمودار) ہوتی ہے، جس کے پاس آپ کا فون نمبر ہو۔ 
2۔ اگر آپ نے اپنے موبائل پر کسی کا وٹس ایپ کے ذریعے بھیجا گیا میسج پڑھ لیا ہے، تو آپ اسے قطعاً یہ نہیں کہہ سکتے کہ ’’ میں نے آپ کا میسج نہیں پڑھا‘‘ کیونکہ میسج پڑھ لینے کے بعد بھیجے والے کے موبائل میں نیلے رنگ کا ٹک کا نشان نمودار ہوتا ہے ،جو یہ بتاتا ہے کہ آپ کا بھیجا گیا میسج پڑھ لیا گیا ہے۔ 
4۔ وٹس ایپ کیونکہ ایک اٹریکٹو (پُر کشش) اور آسان اپیلی کیشن ہے، اس وجہ سے زیادہ تر لوگ اسے دوسری ایپلی کیشنز پر ترجیح دیتے ہیں، لیکن یہاں اس کا نگیٹو پوائنٹ یہ ہے کہ آپ اپنے قریب موجود دوست احباب کو نظر نداز کر وٹس ایپ پر موجود دوستوں سے چیٹنگ کرنا پسند کرتے ہیں، جو قطعاً درست نہیں۔ 
5۔ زیادہ تر طالب علم وٹس ایپ پر لیٹ نائٹ چیٹنگ کرتے ہیں اور ویڈیوز شیئر کر کے اپنا اور اپنے دوستوں کا دل بہلاتے ہیں، لیکن اسی اثنا میں سونے کا وقت گزر جاتا ہے، جو اُن کی جسمانی اور ذہنی صحت کے لئے نہایت بُرا ہے۔ 

دانش احمد


KHAWAJA UMER FAROOQ

About KHAWAJA UMER FAROOQ -

Stand Up for What is Right Even If You Stand Alone.

Subscribe to this Blog via Email :