Tuesday, November 15, 2016

KHAWAJA UMER FAROOQ

دفتر میں چند باتیں ہرگز نہ کریں : ورنہ نقصان کے ذمہ دار آپ خود ہوں گے

ویسے تو ملازمت کرنے والے تمام افراد اس بات سے اتفاق کریں گے کہ دفتر میں موجود سٹاف ہماری فیملی جیسے ہی بن جاتے ہیں، تاہم زندگی کی ایسی بہت سی باتیں ہیں، جو ان کے سامنے نہیں کی جا سکتیں۔ کامیاب افراد کی ایک مثال یہ بھی ہے کہ وہ اپنی باتیں ہر کسی سے شیئر نہیں کرتے، لہٰذا کوشش کریں کہ آپ بھی اپنے دفتر میں چند کام بالکل بھی نہ کریں۔ وہ چند کام کون سے ہیں؟ آئیے جانتے ہیں: 
اپنے سیاسی خیالات اگر آپ ملازمت کرتے ہیں، تو بہتر ہے کہ اپنے دفتر میں اپنے سیاسی خیالات کا ذکر نہ کریں، بہت سے افراد کے سیاسی خیالات ان کی شخصیت کی عکاسی کرتے ہیں اور پھر دوسرے ان خیالات کو جان کر آپ کو جانچنے لگتے ہیں۔ سیاست کو سمجھنے کا انداز ہر کسی کا مختلف ہوتا ہے اور ایسا بھی ہوسکتا ہے کہ ہر کوئی آپ سے اتفاق نہ کرے۔ بہت سے افراد سیاست کو بے حد سنجیدگی سے لیتے ہیں اور ایسا بھی ہوسکتا ہے کہ جو آپ پسند کرتے ہوں وہ دوسرا پسند نہ کرے اور جو دوسرا پسند کرتا ہو ،وہ آپ کو پسند نہ ہو، لہٰذا بہتر یہی ہے کہ اپنے سیاسی خیالات کا ذکر کبھی اپنے دفتر میں نہ کیا جائے کیونکہ کبھی کبھی آپ کو اس کا نقصان بھی اٹھانا پڑ سکتا ہے۔

کسی کو نااہل نہ سمجھیں
ہر دفتر میں ایسے کئی افراد موجود ہوتے ہیں، جو شاید بہت سے کاموں میں نااہل ہوں، لیکن اگر آپ ان کی مدد نہیں کرسکتے، ان کو نوکری سے نکال نہیں سکتے تو سب کے سامنے ان کی نااہلی ظاہر کرنے کی بھی کوشش نہ کریں۔ ایسا کرنے سے آپ کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا بلکہ دوسروں کو ایسا محسوس ہوسکتا ہے کہ آپ خود کو بہتر ثابت کرنے کے لیے کسی دوسرے کو کمتر پیش کررہے ہیں۔ 

اپنی تنخواہ کا ذکر نہ کریں
آپ کے والدین تو ضرور جاننا چاہیں گے کہ آپ اپنے پورے مہینے میں کتنا کما لیتے ہیں، لیکن اس کا ذکر اپنے دفتر میں کرنے کی کوئی ضرورت نہیں، اپنے ساتھیوں کو اپنی تنخواہ بتانا آپ کے لیے مشکل کھڑی کرسکتا ہے کیونکہ پھر ہر کوئی آپ کی تنخواہ سے اپنی تنخواہ کا موازنہ شروع کردے گا اور جب سب کو اس بات کا اندازہ ہوجائے گا کہ آپ کتنا کماتے ہیں تب ہر کوئی آپ کے کام کو آپ کی تنخواہ سے جوڑنا شروع کردے گا۔ 

کبھی یہ نہ بتائیں کہ آپ کو اپنی نوکری پسند نہیں
آپ کے دفتر میں موجود لوگوں کو یہ سن کر بے حد مزہ آتا ہے کہ آپ کو اپنی نوکری پسند نہیں اور اگر یہ بات سب کے درمیان مشہور ہوجائے تو آپ کی ایک منفی شکل سب کے سامنے پیش ہوگی۔ یاد رکھیں کہ دفتر میں ہمیشہ ہی ہر کوئی تیار رہتا ہے کہ وہ آپ کی جگہ لے سکے اس لیے کوشش کریں کہ اپنے خیالات کو سب کے سامنے پیش نہ کریں۔ اپنی ذاتی زندگی اور ماضی کی باتوں سے گریز کریں ویسے تو ہم اپنے دفتر میں اتنا وقت گزارتے ہیں کہ وہاں کے افراد ایک طرح سے ہماری فیملی جیسے ہی بن جاتے ہیں، لیکن کوشش کریں کہ آپ اپنی ذاتی زندگی اور ماضی کی باتیں اپنے دفتر میں ہر کسی سے نہ کریں۔ یہ ضروری نہیں کہ دفتر میں موجود ہر شخص آپ کا دوست ہو اور وہ آپ کی باتوں کو اسی انداز سے سمجھے جیسے آپ سمجھانے کی کوشش کررہے ہیں، اپنی ذاتی باتیں صرف اپنے قریبی افراد سے شیئر کریں تاکہ یہ آپ کے خلاف نہ جائیں۔ یہ بھی ضروری نہیں کہ آپ کی ماضی کی زندگی سب کو پسند آئے اس لیے بہتر ہے کہ آپ اس کے بارے میں بات کرنے سے گریز کریں۔

زرتاشیہ میر

KHAWAJA UMER FAROOQ

About KHAWAJA UMER FAROOQ -

Stand Up for What is Right Even If You Stand Alone.

Subscribe to this Blog via Email :