Wednesday, October 5, 2016

KHAWAJA UMER FAROOQ

انڈین مواد نشر کرنے پر لائسنس کی فوری منسوخی کا فیصلہ

پاکستان میں میڈیا کے نگراں ادارے پیمرا نے ملک میں انڈین چینلز اور انڈین مواد

دکھائے جانے پر ایسا مواد نشر کرنے والی کمپنی کا لائسنس بغیر کسی نوٹس کے فوری طور پر معطل یا منسوخ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ یہ اعلان منگل کو پاکستان الیکٹرانک میڈیا ریگیولیٹری اتھارٹی کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کیا گیا ہے۔ بیان کے مطابق یہ فیصلہ پیر کو ہونے والے اجلاس میں کیا گیا اور اس کے مطابق اتھارٹی نے چیئرمین پیمرا کو یہ اختیارات تفویض کیے ہیں کہ خلاف قانون انڈین چینلز اور انڈین مواد کو دکھائے جانے کی صورت میں وہ بنا اظہار وجوہ کا نوٹس جاری کیے اور سماعت کا موقع فراہم کیے کمپنی کا لائسنس فوری طور پر معطل یا منسوخ کر سکتے ہیں۔
پیمرا کے مطابق انڈین مواد سے متعلق قواعد و ضوابط کا اعلان 31 اگست کو کر دیا گیا تھا اور اب ان کا اطلاق رواں ماہ کی 16 تاریخ سے ہو گا اور ادارہ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی کر سکے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ انڈیا اور پاکستان کے مابین حالیہ کشیدگی کے باعث عوام بھی پرزور مطالبہ کر رہے ہیں کہ انڈین چینلز اور ڈرامے مکمل بند کر دیے جائیں۔ انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں جولائی سے جاری مظاہروں کے بعد دونوں ممالک کے تعلقات کے پہلے سے سرد تعلقات کشیدہ ہو گئے تھے تاہم اس موقع پر پاکستان میں انڈین مواد پر پابندی کے بارے میں زیادہ اقدامات سامنے نہیں آئے۔

تاہم گذشتہ ماہ اوڑی میں فوجی کیمپ پر حملے کے بارے میں تعلقات میں تلخی آئی اور بعد میں انڈیا کی جانب سے پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں سرجیکل سٹرائیکس کے دعوے کے بعد یہ حالات مزید بگڑ گئے۔ انڈیا کے اس دعوے کے بعد سے پاکستان میں جہاں سیاسی جماعتیں ایک پلیٹ فام پر متحد ہوئی ہیں وہیں مقامی سینیماز کے مالکان اور کیبل آپٹرز بھی انڈیا کی فلموں اور دیگر تفریحی مواد پر پابندیاں لگا رہے ہیں اور اب پیمرا نے سرکاری طور پر پہلے سے موجود قوانین پر سختی سے عمل درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ذیشان ظفر
بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد

KHAWAJA UMER FAROOQ

About KHAWAJA UMER FAROOQ -

Stand Up for What is Right Even If You Stand Alone.

Subscribe to this Blog via Email :