Header Ads

Breaking News
recent

لیفٹیننٹ جنرل راحیل شریف نئے آرمی چیف مقرر


 لیفٹیننٹ جنرل راحیل شریف 29 نومبر کو پاک فوج کی کمان سنبھالیں گے۔ لیفٹیننٹ جنرل راشد محمود کو چیئرمین جوائنٹ چیفس آف کمیٹی مقرر کر دیا گیا۔ دونوں لیفٹیننٹ جنرلز کو جنرلز کے عہدوں پر ترقی دیدی گئی ہے۔
اسلام آباد:لیفٹیننٹ جنرل راحیل شریف کو پاک فوج کا نیا سربراہ مقرر کر دیا گیا ہے آئین کے آرٹیکل 3 کے ذریعے وزیراعظم کی سفارش پر صدر پاکستان ممنون حسین نے جنرل راحیل شریف کی نئے آرمی چیف کی حیثیت سے منظوری دی۔ لیفٹیننٹ جنرل راشد محمود کو چیئرمین جوائنٹ چیفس آف کمیٹی مقرر کر دیا گیا۔ دونوں لیفٹیننٹ جنرلز کو جنرلز کے عہدوں پر ترقی دیدی گئی ہے۔ لیفٹیننٹ جنرل راحیل شریف اس وقت انسپکٹر جنرل ٹریننگ اینڈ ایویلوایشن کے عہدے پر تعینات تھے۔ جنرل راحیل شریف گوجرانوالہ کے کور کمانڈر بھی رہ چکے ہیں اور نشان حیدر پانے والے میجر شبیر شریف کے بھائی اور نشان حیدر میجر عزیز بھٹی شہید کے بھانجے ہیں۔ جنرل اشفاق پرویز کیانی نومبر 2007 سے آرمی چیف کے عہدے پر فائز ہیں جن کی مدت ملازمت 29 نومبر کو ختم ہو جانے پر جنرل راحیل شریف پاک ...فوج کے نئے سربراہ کی حیثیت سے حلف اٹھائیں گے۔ واضع رہے کہ پاکستان کے پہلے 2 آرمی چیف انگریز تھے۔ پاک فوج کے پہلے سربراہ برطانیہ کے سر فرینک والٹر مسروی اگست 1947ء سے فروری 1948ء تک اس عہدے پر فائز رہے۔ ان کے بعد جنرل ڈگلس ڈیوی گریسی فروری 1948ء سے اپریل 1951ء تک تعینات رہے۔ ان کے بعد آنے والے کئی فوجی سربراہوں نے نہ صرف فوج بلکہ حکومت کی باگ ڈور بھی طویل عرصے تک سنبھالی۔ تیسرے آرمی چیف فیلڈ مارشل محمد ایوب خان 17 جنوری 1951ء سے 26 اکتوبر 1958ء تک اس عہدے پر تعینات رہے۔ چوتھے آرمی چیف جنرل محمد موسیٰ نے 27 اکتوبر 1958ء سے 17 ستمبر 1966ء تک فوجی سربراہ کی ذمہ داریاں سنبھالے رکھیں۔ ان کا دورانیہ 8 سال رہا۔ جنرل محمد یحییٰ خان 18 ستمبر 1966ء سے 20 دسمبر 1971ء تک ملک کے 5 ویں آرمی چیف رہے۔ جنرل گل حسن قومی تاریخ کے سب سے مختصر مدت کیلئے فوجی سربراہ بننے والی شخصیت ہیں۔ انھوں نے 22 جنوری 1972ء کو چھٹے آرمی چیف کا عہدہ سنبھالا اور 2 مارچ 1972ء تک آرمی چیف رہے۔ ان کی بطور آرمی چیف مدت ملازمت مشکل سے ڈیڑھ ماہ بنتی ہے۔ 7 ویں آرمی چیف جنرل ٹکا خان 3 مارچ 1972ء سے یکم مارچ 1976ء تک اس عہدے پر رہے۔ اس کے بعد جنرل ضیا الحق یکم مارچ 1976ء سے 17 اگست 1988ء تک ساڑھے 12 سال کے طویل عرصے تک 8 ویں آرمی چیف کے طور پر اس منصب پر رہے۔ پرویز مشرف نے 12 اکتوبر 1999ء کو بطور ملک میں فوجی قانون نافذ کرنے کے بعد وزیراعظم نواز شریف کو جبراً معزول کر دیا اور پھر 20 جون 2001ء کو ایک صدارتی استصوابِ رائے کے ذریعے صدر کا عہدہ اختیار کیا جس سے قبل وہ ملک کے چیف ایگزیکٹو کہلاتے تھے۔ مشرف نے 18 اگست 2008ء کو قوم سے خطاب کے دوران اپنے استعفیٰ کا اعلان کیا۔ جنرل اشفاق پرویز کیانی نومبر 2007 سے آرمی چیف کے عہدے پر فائز ہیں.

Enhanced by Zemanta

No comments:

Powered by Blogger.